64

قندوزمیں مدرسے کے بے گناہ طالبعلموں پر بمباری کھلی دہشت گردی ہے: مولانا محمد عارف حقانی

مہمند ایجنسی ( نورشاد شباب سے ) مہمند ایجنسی، مہمند ایجنسی جمعیت علماءاسلام (ف) مہمند ایجنسی کے امیر مولانا محمد عارف حقانی نے کہاہے کہ قندوزمیں مدرسے کے بے گناہ طالبعلموں پر بمباری کھلی دہشت گردی ہے۔امریکہ مسلمانوں کے خلاف حملوں کیلئے بہانے تلاش کر رہے ہیں۔اسلامی ممالک اپنے صفوں میں اتحاد پیداکرکے امریکی حملے کا بھر پور جواب دیں۔اسلام کے قلعے “مدارس”پر حملے کسی صورت قبول نہیں کریں گے۔ اور امریکی انہوں نے کہاکہ امریکہ خود دہشت گردی کو فروغ دے رہاہیں اور پھر الزامات کے لئے مسلمانوں کے خلاف بہانے تلاش کررہے ہیں۔ مدارس کے خلاف امریکی سازش ناکام بنادیں گے اور امریکی جارحیت کا منہ توڑ جواب دیں گے۔

مہمند ایجنسی ( نورشاد شباب سے ) مہمند ایجنسی، مشران و عوام نے امن بحالی میں سیکورٹی فورسز کے شانہ بشانہ قربانی دی ہے۔ ایجنسی میں بد امنی کا دور گزرچکا ہے۔ امن کا مشن جاری رکھیں گے۔ ہم نے پولیٹیکل حکام کے ساتھ ہر مشکل وقت میں ساتھ دیا ہے۔ مہمند قوم کے مشران عزت دار لوگ ہیں۔ ہم نے ان کی بھر پور حوصلہ آفزائی کی ہے۔ الوداعی تقریب سے پولیٹیکل ایجنٹ مہمند کا خطاب۔ تفصیلات کے مطابق جمعہ کے روز مہمند ایجنسی کے مشران نے غلنئی میں سابقہ پولیٹیکل ایجنٹ مہمند محمود اسلم وزیر اعزاز میں الوداعی تقریب کا اہتمام کیا ۔ تقریب میں پولیٹیکل ایجنٹ مہمند محمد واصف سعید نے بھی شرکت کی۔ اس موقع پر سابقہ پولیٹیکل ایجنٹ مہمند محمود اسلم وزیر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مہمند قوم کے مشران نے امن بحالی میں پولیٹیکل حکام اور سیکورٹی فورسز کے ساتھ شانہ بشانہ ہو کر قربانیاں دی ہیں۔ اور یہی وجہ ہے کہ یہاں کے مشران نے اجتماعی ذمہ داری کو احسن طریقے سے نبھایا ہے۔ مہمند قوم کے روایات پورے فاٹا سے الگ ہے اور یہاں جرگہ سسٹم بحال ہے اور ہر مشکل میں بھر پور کردار ادا کیا ہے۔ اس موقع پر مقامی مشران ملک صاحب خان، ملک عزت خان،ملک نادر منان کوڈا خیل، ملک صاحب داد خان، ملک فیاض خویزئی، ملک حاجی احمد خویزئی، ملک سلطان بائیزئی، ملک نذیر خان حلیمزئی، ملک اجمل خان کدی خیل، ملک امیر نواز خان، ملک نصرت ترگزئی، ملک نثار ، ملک حاجی صوبیدار صافی، ملک سید محمود جان، ملک عطاءاللہ وی دیگر مشران نے پولیٹیکل ایجنٹ مہمند محمود اسلم کے دوسالہ کارکردگی کو سراہا اور ایجنسی کے حالات کو بہتر بنانے پر انہیں خراج تحسین پیش کیا اور مشران نے باب مہمند تک انہیں جلوس کی شکل میں رخصت کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں