68

اسلام آباد کی پارلیمنٹ پر لکھے ہوئے کلمہ کو ملک میں رائج کریں گے:سیف اللہ خالد

شیخوپورہ(پاکستان اپ ڈیٹس )ملی مسلم لیگ کے صدر سیف اللہ خالد نے کہا ہے کہ اسلام آباد کی پارلیمنٹ پر لکھے ہوئے کلمہ کو ملک میں رائج کریں گے۔اب بانی پاکستان کے نظریہ کے مطابق سیاست ہو گی۔حکومت ملی مسلم لیگ کی رجسٹریشن میں رکاوٹ بنی ہوئی ہے۔سیاست کرنے کا ہر کسی کو بنیادی حق حاصل ہے اور ہمیں اس حق سے روکا جا رہا ہے۔ہم کسی پارٹی کے مقابلے یا کسی کو گرانے نہیں بلکہ قائدا عظم کے پاکستان کو بچانے کے لئے میدان میں آئے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مقامی ہال میں سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔سیمینار میں شہر و گردو نواح سے تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔سیمینار سے معروف سیاسی و سماجی شخصیت ماسٹر عبداللہ،پی پی142سے ملی مسلم لیگ کے کنوینئر احسان اللہ گجر،ملی مسلم لیگ ضلع شیخوپورہ کے صدر چوہدری شہزاد علی ورک،ملی مسلم لیگ شیخوپورہ کے کنوینئر شہزاد بسراڈاکٹر عتیق الرحمان،فیض الرحمان نے بھی خطاب کیا۔سیف اللہ خالد نے کہا کہ آج پاکستان اندرونی و بیرونی خطرات سے دوچار ہے۔پاکستان کے خلاف ہونے والی سازشوں کا ڈٹ کا مقابلہ کریں گے۔ہم سیاسی جماعتوں کے قائدین سے ملاقاتیں کر رہے ہیں،اراکین اسمبلی سے بھی رابطے میں ہیں۔ہم اقتدار کے لئے سیاست میں نہیں آئے۔اسلام آباد کی پارلیمنٹ پر لکھے ہوئے کلمہ کو ملک میں رائج کرنا ہے ۔یہ ہمارا ایجنڈہ ہے۔انہوں نے کہا کہ سیاست کے میدان میں لوٹ مار ،کرپشن کرنے والوں کے ساتھ کھڑا ہونے کی بجائے نظریہ پاکستان کی بنیاد پر ووٹ دیں۔موجودہ حکومت ملی مسلم لیگ کی راہ میں رکاوٹ بنی ہوئی ہے۔ہم عزم کر کے نکلے ہیں کہ اب سیاست کے دھاروں کو بدلیں گے اور بڑی بڑی پارٹیوں کے لیڈروں کو باور کروا رہے ہیں کہ بانی پاکستان نے جو نظریہ دیا تھا اسی پر چلیں ۔جو اس نظریہ پر سیاست کرے گا اس کے راستے میں رکاوٹ نہیں بنیں گے۔سیاست کرنے کا ہر کسی کو بنیادی حق ہے۔پاکستان میں اب نظریہ پاکستان کی سیاست چلے گی۔کسی ایسے فرد کو سیاست نہیں کرنے دیں گے جو ووٹ پاکستانی قوم سے لے اور محبت مودی سے کرے۔سیف اللہ خالد نے کہا کہ ہم نوجوان قیادت کی رفاقت میںایک ایک فرد تک جائیں گے،ڈور ٹو ڈور،ایک ایک برادری تک جائیں گے اور ملی مسلم لیگ کے منشور کو عام کریں گے۔جماعتوں ،برادریوں کے نمائندوں سے درخواست کرتا ہوں کہ ہم سب ایک ہیں،ہمارا وطن ایک ہے۔ہم پاکستانی ہیں اور ہمارا دین اسلام ہے۔مفادات کی سیاست ختم اور اتحاد کی سیاست کو رواج دیں گے۔انہوں نے کہا کہ انگریز اورہندو سے لاکھوں قربانیوں کے بعد ملک آزاد ہوا تھا۔ا ب حکمران ورلڈ بینک،آئی ایم ایف کی غلامی کر رہے ہیں۔ہم نے پاکستان کو آزاد کروانا ہے۔کشمیر کی آزادی بھی پاکستان کی آزادی سے جڑی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں