171

نوازشریف کی نا اہلی کے فیصلے سے ن لیگ نہیں ملک کمزور ہو گا ۔پروفیسر ساجد میر

لاہور (پاکستان اپ ڈیٹس ) امیر مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے کہا ہے کہ نوازشریف کی نا اہلی کے فیصلے سے ن لیگ نہیں ملک کمزور ہو گا ۔ پیپلز پارٹی چاروں صوبوں کی زنجیر نہ رہی، ایم کیوایم کے حصے بخرے ہورہے ہیں اور اب ن لیگ کو ٹارگٹ کیا جارہا ہے جو جمہوریت اور وفاقیت کے لیے نیگ شگون نہیں ۔ مرکزی راوی روڈ سے جاری اپنے ردعمل میں پروفیسر ساجد میر کا کہنا تھا کہ جماعتیں جتنی بھی خراب کیوں نہ ہوں جمہوریت کے لیے ناگزیر ہو تی ہیں ۔پاکستان جیسے ملک میں جہاں بین الصوبائی اور وفاقیت کے مسائل ہوں وہاں سیاسی جماعتوں کی اہمیت اور بڑھ جاتی ہے ۔ مسلم لیگ ن اور تحریک انصاف دونوں کا استحکام جمہوریت کا استحکام ہے۔
۔ ملک میں یکجہتی اور بین الصوبائی ہم آہنگی مضبوط سیاسی جماعتوں کے ذریعے ممکن ہوتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی مثال سامنے ہے کہ وہ اب چاروں صوبوں کی زنجیر نہیں رہی ۔ ایم کیوایم اگرچہ ملک گیر جماعت نہیں ہے کسی حد تک سندھ میںتھی تاہم اب اسکے اثرات تقریبا ختم ہو چکے ہیں۔ ان حالات میں ملکی وفاقیت کے لیے ن لیگ اور تحریک انصاف کی اشد ضرورت ہے ۔ ٹو پارٹی سسٹم جمہوریت اور وفاقیت ہر دو لحاظ سے اکٹھا رہنا ضروری ہے ۔ پروفیسر ساجد میر نے کہا کہ ان حالات میں ملکی وفاق کو نقصان پہنچانے سے روکنے کی ضرور ت ہے ۔ پڑی پارٹیوں میں کسی ایک کا کمزور ہو نا جمہوریت اور وفاق کے لیے نقصان دہ ہے ۔ علاوہ ازیں ان کا کہنا تھا قانون اندھا ہو تا ہے مگر اسے اتنا بھی اندھا نہیں ہونا چاہیے کہ مسلم لیگ ن کے ترقیاتی کام اور بہتری نظر ہی نہ آئے۔ موجودہ حکومت نے لوڈشیڈنگ پر قابو پایا، سی پیک کا منصوبہ دیا انفراسٹریکچر کو بہتر کیا۔ اگر یہ سب کچھ لوگوں کو نظر آتا ہے تو قانون کو کیوں نظر نہیں آتا ۔ انہوں نے کہا کہ مضبوط پارٹیوں کا وجود سیاست کے لیے ضروری ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں