20

سندھ میں کوئی کام ٹھیک بھی ہو رہا ہے؟ چیف جسٹس

کراچی( پاکستان اپ ڈیٹس )چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے لگژری گاڑیوں کے استعمال سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران کہا کہ سندھ میں کوئی کام ٹھیک بھی ہو رہا ہے۔ سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے وزرا کے زیر استعمال لگژری گاڑیوں کے معاملے کی سماعت کی۔ ایڈووکیٹ جنرل سندھ ضمیر گھمرو نے لگژری گاڑیوں کے استعمال کا سرکاری نوٹی فکیشن عدالت میں پیش کرتے ہوئے بتایا کہ 149 لگژری گاڑیاں تحویل میں لے لی ہیں، فیلڈ ورک اور خصوصی مقاصد کے لیے لگژری گاڑیاں استعمال کی جا سکیں گی، گاڑیوں کے استعمال کے لیے یومیہ 25 ہزار روپے ادا کرنا ہوں گے۔ چیف جسٹس نے لگژری گاڑیوں کے استعمال سے متعلق نوٹی فیکیشن کو کالعدم قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس کا مطلب ہے اب سندھ حکومت نے کرائے پر گاڑیاں دینا شروع کردیں، سندھ میں کوئی کام ٹھیک بھی ہو رہا ہے، یہ سب بد نیتی کی بنیاد پر کام کیا جا رہا ہے، اس نوٹی فیکیشن کے تحت وزرا پھر سارا دن یہ گاڑیاں استعمال کر سکیں گے، وزرا کو پجارو سے کم گاڑی پسند ہی نہیں آتیں۔ عدالت نے سماعت 28 جون کے لیے ملتوی کردی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں