79

اقتدار میں آکر تحفظ ناموس رسالت کے قوانین کو مزید بہتر بنائیں گے: سینیٹر سراج الحق

دیر (پاکستان اپ ڈیٹس )امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ عشق مصطفی کا تقاضا ہے کہ ملک میں نظام مصطفی نافذ ہو ۔ اقتدار میں آکر تحفظ ناموس رسالت کے قوانین کو مزید بہتر بنائیں گے ۔ مغربی لابی ناموس رسالت قانون کو ہدف بنائے ہوئے ہے ۔ الیکشن2018 ءکا اصل مقابلہ لبرل اور نظریہ پاکستان پر ایمان رکھنے والوں کے درمیان ہے ۔ ستر سال سے مسلط کرپٹ اشرافیہ نے نظریے کو چھوڑا اور ملک کو توڑا ۔ سیاست کو پیسے کا کھیل بنادیا گیاہے لیکن الیکشن کمیشن بے بس نظر آرہاہے ۔ اگر انتخاب اور احتساب ساتھ ساتھ چلتا تو بہت سے لٹیروں کار استہ روکا جاسکتا تھا ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے حلقہ انتخاب کے قصبہ رانی دیر میں انتخابی دفتر کی افتتاحی تقریب کے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر صاحبزادہ یعقوب خان اور مولانا اسد اللہ بھی موجود تھے ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ الیکشن کے موقع پر الیکشن کمیشن کو بے بس نظر نہیں آنا چاہیے بلکہ پوری قوم سے انتخابی قوانین اور ضابط اخلاق پر عمل کو یقینی بناناچاہیے ۔ سیاست اور جمہوریت کو گھر کی لونڈی سمجھنے اور الیکشن کو پیسے کا کھیل بنانے والوں نے موجودہ الیکشن کو بھی یرغمال بنانے کے لیے منفی ہتھکنڈے استعمال کرنا شروع کردیے ہیں مگر الیکشن کمیشن ان ہتھکنڈوں اور ضابطہ اخلاق کے خلاف سرگرمیوں کا کوئی نوٹس نہیں لے رہا جس سے عا م ووٹر شاکی نظر آتا ہے ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ سیکولر اور لبرل لابی کے پاکستان کی اسلامی شناخت کو ختم کرنے اور آئین میں موجود تحفظ ناموس رسالت کے قانون سمیت آئین کی اسلامی دفعات کو بدلنے اور حذف کرنے کے عزائم اب کوئی ڈھکی چھپی بات نہیں اور اس ناپاک ایجنڈے کی تکمیل میں مغربی اور امریکی سامراج پوری طرح ان کی پشت پناہی کر رہاہے ۔ قوم عالمی سامراج کے عزائم کو اچھی جانتی ہے ۔ تحفظ نامو س رسالت کے قانو ن پر پہرہ دینے کے لیے اسے دینی قوتوں کا ساتھ دینا ہوگا ۔ انہوںنے کہاکہ متحدہ مجلس عمل پاکستان کی نظریاتی اور دفاعی سرحدوں کی حفاظت کے لیے کوئی کسر اٹھا نہیں رکھے گی ۔ لبرل لابی کو ناکامی سے دوچار ہوناپڑے گا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں