108

جعلی پولیس آفیسر نے چکوال ٹریفک پولیس کے اہلکاروں کو استعمال کر کے ڈی پی او چکوال کے نام پر یوفون فرنچائز سے تیس ہزار روپے ہتھیا لیے،،،چکوال کی مزید خبریں

چکوال( بیو رو رپورٹ)جعلی پولیس آفیسر نے چکوال ٹریفک پولیس کے اہلکاروں کو استعمال کر کے ڈی پی او چکوال کے نام پر یوفون فرنچائز سے تیس ہزار روپے ہتھیا لیے۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نے واقعہ کا علم ہونے پر تحقیقات کا حکم دے دیا۔گزشتہ روز ٹریفک پولیس کے اہلکار نے یوفون ،ٹیلی نار اورزونگ فرنچائز پر جا کر کوائف اکٹھے کیے جس کے تھوڑی دیر بعد جعلی اے ایس پی نے موبائل فون نمبر 0309-7473269سے یوفون فرنچائز پر کال کی کہ ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر اور دیگر افسران نے ایمرجنسی حالات میں چارج سنبھالا ہے اور باہر سے کچھ دیگر افسران بھی پہنچ رہے ہیں لہذا آپ فوری طور پر چالیس ہزار روپے کی کیش اس نمبر پر بھجوا دیں ۔ڈی پی او آفس کا اہلکار تھوڑی دیر بعد آپ کو رقم پہنچاتا ہے۔ یوفون فرنچائز سے تیس ہزار روپے کی کیش جعلی آفیسر کو فوری طور پر بھجوا دی گئی جبکہ فرنچائز پر جا کر ڈیٹا اکٹھا کرنے والے ٹریفک پولیس اہلکار بھی جی سر جی سر کرتے رہے اور وہ بھی جعلی اے ایس پی کو نہ پہچان کرتے رہے۔ جعلی پولیس آفیسر نے رقم ہتھیانے کے بعد فوری طور پر موبائل نمبر آف کر دیا۔گزشتہ روز ڈی پی او کی پریس کانفرنس میں مذکورہ واقعہ بارے جب استفسار کیاگیا تو ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نے واقعہ کو نوسربازوں کی کاروائی قرار دیتے ہوئے تحقیقات کے احکامات جاری کیے۔

چکوال( بیو رو رپورٹ)چکوال پولیس نے قتل کی سنگین وارداتوں میں ملوث قاتلوں کو گرفتار کر لیا۔گرفتار کیے جانے والوں میں ماں کے قاتل تین بیٹے ،تین بہنوں اور چچا کو قتل کرنے والا سفاک قاتل بھی شامل ہے۔72سابقہ ریکارڈ یافتہ ڈکیت ملزمان بھی گرفتار کیے گئے ،یہ بات ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر چکوال عادل میمن نے اپنے دفتر میں پرہجوم پریس کانفرنس میں بتائی، اس موقع پر گرفتار کیے جانے والے ملزمان کو بھی میڈیا کے سامنے پیش کیاگیا۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر چکوال نے بتایا کہ ڈوہمن پولیس نے ولی محمد نامی قاتل کو گرفتار کیا جس نے تین بہنوں کو قتل کیاتھا اور گزشتہ برس اپنے چچا کو قتل کر کے لاش کنوئیں میں پھینک دی تھی ۔مذکورہ قتل پولیس کے لیے چیلنج بنا ہوا تھا۔ جس کے لیے شب و روز محنت کی گئی ۔ڈھوک پروانہ میں زمین کے تنازعہ پر دو ملزمان نے محمد اعظم کو قتل کیا اور متعدد کو زخمی کیاتھا اور عبوری ضمانت کروائی تھی دونوں ملزمان ضمانت منسوخ ہونے پر عدالت سے فرار ہو گئے تھے جنہیں انچارج ہومو سائیڈ انویسٹی گیشن ونگ صدر سرکل سب انسپکٹر خاور سعید نے گرفتار کیا ۔علاوہ ازیں سلطان بی بی کو قتل کرنے والے تین ملزمان بیٹوں کو پولیس نے گرفتار کیا ،چتال میں اپنی بہن عاصمہ بی بی اور اس کی نند فاخرہ بی بی کو بدچلنی کے شبہ میں قتل کرنے والے ملزم نثار خان کو گرفتار کیا۔اسی طرح چند روز قبل قصبہ دلہہ میں سمن آباد سے دلربا نامی خاتون کو اغواءکر کے قتل کرنے والے ملزم ثقلین کو گرفتار کیا ۔مقتولہ کی لاش بوری میں بند گلی سڑی ویران کنوئیں سے برآمد کی گئی۔ ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نے بتایا کہ پولیس نے اے کیٹگری کا ایک اور بی کیٹگری کے آٹھ اشتہاری ملزمان جبکہ72ریکارڈ یافتہ ملزمان جو کہ ڈکیتی کی مختلف وارداتوں میں ملوث تھے کو کیاگیا۔

چکوال( بیو رو رپورٹ)ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر عادل میمن نے پریس کانفرنس میں قتل کے خطرناک ملزمان کو گرفتار کرنے پر انچارج ہومو سائیڈ انویسٹی گیشن صدرسرکل سب انسپکٹر خاور سعید کے لیے انعامات اور تعریف سرٹیفکیٹ کا اعلان کیا اور ان کے کردار کی تعریف کی۔دریں اثناءپریس کانفرنس میں ڈی ایس پی چوہدری اثر علی خان ،ڈی ایس پی صدر سرکل رحمان قادراور تھانوں میں نئے تعینات ہونے والے ایس ایچ اوز نے بھی شرکت کی۔

چکوال( بیو رو رپورٹ)فالکن فورس کی کارکردگی مزید بہتر بنانے اور تھانوں میں آنے والے سائلین کی داد رسی کے لیے خصوصی ہدایات جاری کر دی گئیں۔ ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر عادل میمن کی ہدایت پر فالکن فورس چکوال چوآسیدن شاہ اور تلہ گنگ کے تیس موٹرسائیکلوں سمیت تمام تھانوں میں موجود سرکاری موٹرسائیکل پولیس لائن لائے گئے جہاں پر ان کی مینٹیننس کے حوالے سے خصوصی چیک اپ کروایاگیا اور پھر انہیں دوبارہ مینٹیننس کے بعد پولیس اہلکاروں کے حوالے کیاگیا۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نے موٹر سائیکل دہندگان کو ہدایت کی کہ وہ اپنی ذات کے ساتھ ساتھ محکمہ کی پراپرٹی کا بھی خصوصی خیال رکھے۔دریں اثناءڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نے تھانوں کے ایس ایچ اوز اور پولیس افسران کو ہدایت کی کہ وہ تھانہ میں آنے والے سائلین کی داد رسی یقینی بنائیں اور ان کے ساتھ خوش اخلاقی سے پیش آئیں۔

چکوال( بیو رو رپورٹ)ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر عادل میمن نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ ضلع بھر میں جعلی اور بغیر نمونہ نمبر پلیٹ لگانے و سرکاری و نیم سرکاری نمبر پلیٹس استعمال کرنے پر سخت کاروائی کی ہدایت کر دی ہے اور اس کا آغاز محکمہ پولیس سے کیا ہے۔موٹر سائیکلوں اور گاڑیوں پر پولیس کی نمبر پلیٹیں لگا کر گھومنے والے پولیس اہلکاروں کے خلاف سخت کاروائی کی جا رہی ہے اور اس کے بعد پریس اور دیگر محکموں کی نمبر پلیٹیں استعمال کرنے والوں کے خلاف بھی کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔

چکوال( بیو رو رپورٹ)سینیٹر لیفٹیننٹ جنرل(ر) عبدالقیوم نے مسلم لیگ ن کے نامزد امیدواروں کی انتخابی مہم کی کمان خود سنبھال لی ۔اس بات کا اعلان انہوں نے پادشہان میں اپنی رہائشگاہ پر منعقدہ مسلم لیگ ن کے عمائدین کے اجتماع سے خطاب کے دوران کیا۔اس موقع پر مسلم لیگ ن کے این اے64سے امیدوار میجر(ر) طاہر اقبال اور پی پی22سے امیدوار ملک تنویر اسلم سیتھی اور متعدد یونین کونسلوںکے چیئرمینوں نے بھی شرکت کی۔ لیفٹیننٹ جنرل(ر) عبدالقیوم کاکہنا تھا کہ مسلم لیگ ن عوام کی خدمت کا جذبہ رکھتی ہے اور گزشتہ دور حکومت میں جتنے ترقیاتی کام مسلم لیگ ن نے کروائے ان کی مثال تاریخ میں نہیں ملتی۔ جنرل(ر) عبدالقیوم کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن کے سوا کوئی بھی جماعت ایسی نہیں جو ملک کو تعمیر و ترقی کی راہ پر چلائے اور عوام کے اعتماد اور معیار پر پورا اتر سکے۔انہوں نے کہا کہ اس سے پہلے پیپلزپارٹی کی حکومت نے ملک کی جو تباہی مچائی اور پی ٹی آئی کی حکومت نے خیبر پختونخواہ میں جو حشر کیا وہ عوام کے سامنے ہے ۔انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے پانچ سالوں میں جو ترقی ہوئی وہ ستر سالوں میں بھی نہیں ہوئی۔قبل ازیں امیدوار برائے قومی اسمبلی میجر(ر) طاہر اقبال کا کہنا تھا کہ پاکستان نے جب بھی معاشی طور پر اٹھنے کی کوشش کی شب خون مارا گیا اور یہ سلسلہ ایوب خان کے دور سے جاری ہے۔آج میاں نواز شریف کو صرف اسی وجہ سے سزا دی جا رہی ہے کہ انہوں نے پاکستان کو ترقی کی راہ پر لے جانے کی کوشش کی۔ میجر(ر) طاہر اقبال کا کہنا تھا کہ جو قوتیں پاکستان کو متحد نہیں دیکھنا چاہتیں وہی قوتیں ہمارے قائد میاں نواز شریف کو دیوار کے ساتھ لگانے کی کوشش کر رہی ہیں۔امیدوار برائے صوبائی اسمبلی اور سابق صوبائی وزیرملک تنویر اسلم سیتھی کا کہنا تھا کہ عوامی خدمت اور علاقائی تعمیر و ترقی میرا مشن ہے یہی وجہ ہے کہ عوام نے ہمیشہ مجھ پر بھرپور اعتماد کرتے ہوئے بھاری کامیابی سے نوازا۔ملک تنویر اسلم سیتھی کا کہنا تھا کہ وہ چوتھی مرتبہ عوام کی خدمت میں حاضر ہو رہے ہیں ۔2002ءمیں جب وہ پہلی مرتبہ رکن صوبائی اسمبلی منتخب ہوئے تو انہوں نے 34ہزار ووٹوں کی برتری حاصل کی تھی۔ 2008ءمیں دوسری مرتبہ اپنی کارکردگی کی بناءپر عوام کی عدالت میں پیش ہوا تو عوام نے بے پناہ محبت کا اظہار کرتے ہوئے اٹھاون ہزار ووٹوں کی برتری سے نوازا۔ تیسری مرتبہ 2013ءمیں پھر اپنی کارکردگی کی بناءپر اپنے آپ کو عوام کے سامنے پیش کیا تو اس مرتبہ عوام کی طرف سے جس محبت کا اظہارکیاگیا وہ میں زندگی بھر نہیں بھول سکتا۔اس مرتبہ مجھے 75ہزار ووٹوں کی برتری ملی اور سب سے بڑھ کر یہ کہ میں پنجاب میں سب سے زیادہ لیڈ حاصل کرنے والا رکن صوبائی اسمبلی بنا۔ جس کے اعزاز میں مجھے میرے قائد میاں شہباز شریف نے وزارت سے نوازا اور عوام کی خدمت بہتر انداز میں کر کے دکھائی۔اب میں چوتھی مرتبہ عوام کے سامنے پیش ہوا ہوںاور یہی سوچ رکھا ہے کہ عوام اب پہلے سے زیادہ محبت کا اظہار کرتے ہوئے ایک لاکھ سے زائد کی لیڈ دیں گے جو میرے لیے بہت بڑا اعزاز ہوگا۔ملک تنویر اسلم نے کہا کہ موجودہ الیکشن میں کامیابی کے بعد وہ چوتھی مرتبہ عوام کی محرومیوں کے ازالے کے لیے پہلے سے بڑھ کر محنت کرینگے۔اجتماع سے چوہدری صفدر رتہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوام ملک ،قوم اور علاقہ کی ترقی کے لیے مسلم لیگ ن کو ووٹ دیں اور تعمیر و ترقی کے تسلسل کو آگے بڑھائیں۔ چوہدری صفدر رتہ کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت نے عوام کی فلاح اور بہتری کے لیے گزشتہ پانچ سالوں میں بے پناہ کام کیا ۔سابق ناظم قاضی محمد شفیق رانجھا نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوام پچیس جولائی کو جھوٹے مقدمات کروانے اور ناچ گانے کی سیاست کرنے والوں کو مسترد کر دیں۔اس موقع پر چوہدری صفدر ہسولہ ،راجہ ضمیر حسین للیاندی،چیئرمین یونین کونسل چوآگنج علی شاہ راجہ اشفاق، چیئرمین یونین کونسل ڈوہمن ملک ظفر اقبال، چیئرمین یونین کونسل ملہال مغلاں راجہ ارشد دھروگی، چیئرمین یونین کونسل کریالہ چوہدری عرفان حیدر، چیئرمین یونین کونسل ہرچار ڈھاب چوہدری محمد ضمیر خان، علاقہ لنڈی پٹی کے سرگرم لیگی رہنما عرفان بھٹی، لیگی رہنما چوہدری مسرت ڈورے اور لیگی رہنما حاجی پرویز سمیت سرکردہ سیاسی شخصیات نے شرکت کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں