72

احتساب سب کا ہو نا چاہئے احتساب عدالت کا فیصلہ مسلم لیگ ن کے اصحاب کا امتحان ہے :سینیٹر سراج الحق

مردان (پاکستان اپ ڈیٹس )جماعت اسلامی پاکستان کے امیر سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ احتساب سب کا ہو نا چاہئے احتساب عدالت کا فیصلہ مسلم لیگ ن کے اصحاب کا امتحان ہے کسی ایک فرد کو سزا دینے سے جمہوریت کی گاڑی ڈی ریل نہیں ہونی چاہئے۔ پاناما میں شامل 436 افراد کا کیس چیونٹی کی رفتار سے چل رہا ہے ۔پاناما لیکس میں جتنے افراد کے نام ہیںان سب کا احتساب ضروری ہے۔ احتسا ب عدالت کا فیصلہ انتخاب ملتوی ہونے کا باعث نہیں ہو نا چاہئے ۔سیکولر اور لبرل پارٹیوں کو ووٹ دینے والے اپنے لیڈروں سمیت برابر کی سزا پائیں گے سیکولر لوگوں کے گناہوں کا بوجھ ان کے ووٹر اٹھائیں گے۔70 سال سے پاکستان پر سیکولر ، لبرل اور کرپٹ لوگ قابض ہیں جو ہمیشہ کی طرح ووٹ لے کر خود شراب و کباب میں غرق امریکہ اور یورپ چلے جائینگے ،ملک وقوم پر قرضوں کے بوجھ اور کرپشن کے پہاڑ کھڑے کر جائیں گے۔عوام بیدار اور ہوشیار ہو جائیں اور خان و سردار وڈیروں اورچودھریوں، زرداریوں اور کھلاڑیوں کی دنیا بنانے کےلئے اپنی دنیا اور آخرت برباد نہ کریں ۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے مردان میں جلسہ عام سے خطاب اور میڈیا سے بات چیت کر تے ہوئے کیا۔ اس موقع پر جماعت اسلامی مردان کے امیر مولانا ڈاکٹر عطا ءالرحمن ، جماعت اسلامی کے سابق صوبائی امیر مولانا سلطان محمد، شوکت علی امازئی ، فخر عالم امازئی ، مولانا اسرار الحق ، جے یو آئی کے رہنما اور سابق صوبائی وزیر حافظ اختر علی سمیت علاقہ کے عمائدین اور عوام کی ایک بڑی تعداد موجود تھی ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ متحدہ مجلس عمل ملک میں اسلامی انقلاب کی جدوجہد کررہی ہے۔ ہم ملک میں نظام مصطفی نافذ کریں گے اور احتساب کا خود کار نظام رائج کر کے چوروں لٹیروں اور قومی دولت لوٹ کر باہر منتقل کرنے والوں کو پکڑ کر جیلوں میں بند کریں گے۔ متحدہ مجلس عمل 25 جولائی کو سیکولر اور لبرل ازم کا بوریا بستر گول کردے گی اور ملک سے سودی نظام کا خاتمہ کر کے زکوة اور عشر کا نظام قائم کرے گی ۔ ہم عدالتوں اور اداروں میں قرآن کو سر بلند اور فیصلوں کی کتاب دیکھنا چاہتے ہیں ۔ غریب کو عدل و انصاف ، تعلیم و صحت اور روزگار کی سہولتیں دینا ریاست کی ذمہ داری ہے۔ انہوںنے کہاکہ جن جماعتوں نے تمام لٹیروں کو جمع کرلیاہے ، وہ ملک میں کیا انقلاب اور تبدیلی لائیں گی ۔ لوٹے قوم کی قسمت نہیں بدل سکتے ۔ دینی جماعتوں کے اتحاد ایم ایم اے میں کوئی ایک فرد بھی نیب زدہ نہیں اور نہ کسی کے دامن پر کرپشن کا کوئی داغ ہے ۔ انہوںنے کہاکہ پی ٹی آئی کے مخلص کارکنوں کی ملک میں تبدیلی کی خواہش کا گلا گھونٹ دیا گیاہے اور ان کے خواب چکنا چور کردیے گئے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ ملک میں تبدیلی صرف ایم ایم اے لاسکتی ہے ۔ جب ہم احتساب کریں گے تو کسی بڑے سے بڑے مجرم کو بھاگنے کا موقع نہیں ملے گا ۔ انہوںنے کہاکہ غیرت مند پختون کسی چور اور لٹیرے کواپنے اوپر مسلط کرنا اپنی توہین سمجھتے ہیں ۔خیبر پی کے کے عوام 25 جولائی کو سیکولر اور لبرل ازم کو ہمیشہ کے لیے دفن کردیں گے ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ ووٹ عوام کی طاقت ، فیصلہ، نظریہ ، امانت اور آئندہ نسلوں کا مستقبل ہے۔ اسلامی شریعت میں سیکولر شخص کو قرض دینا منع اور ووٹ کی امانت اس کے حوالہ کر نا حرام اور جرم ہے ۔ سیکولر ازم اللہ اور رسول کے دین اوروطن کا دشمن ہے اللہ کا دشمن کبھی بھی اللہ کی مخلوق کادوست اور عوام کا ہمدرد نہیں ہو سکتاوہ صرف اپنی ہوس اور لالچ کا غلام ہے چاہے اس کےلئے ملک و قوم کو آگ میں ڈالنا پڑے ۔حیا سے عاری لبرل اور سیکولر پارٹیوں کو ووٹ دینا اللہ تعالیٰ سے بغاوت ، نبی کی شریعت سے بیوفائی اور دشمنی ہے ۔ سیکولر اور لبرل پارٹیوں کو ووٹ دینے والے اپنے لیڈروں سمیت برابر کی سزا پائیں گے سیکولر لوگوں کے گناہوں کا بوجھ ان کے ووٹر اٹھائیں گے ایسے ووٹر اور انکے لیڈر جلد خدا کی پکڑ میں آئینگے اور ان کا سخت مواخذہ ہو گا۔لبرل و سیکولر پارٹیوں کا منشور یہ ہے کہ بوڑھوں کو اولڈ ہاوسز میںدھکیل دیا جائے ۔ماﺅں بہنوں کو چادر اور چار دیواری اور عوام کو رزق حلال سے محروم اور تعلیمی اداروں میں دین دشمنوں کا دیا گیا نصاب اور حکم نافذ کیا جائے ۔70 سال سے پاکستان پر سیکولر ، لبرل اور کرپٹ قابض لوگ ہمیشہ کی طرح ووٹ لے کر خود امریکہ اور یورپ میں بھاگ جائیںگے اور عوام قرضوں کے بوجھ اور کرپشن کے پہاڑ کھڑے کر جائیں گے۔ووٹ کی امانت عین جہاد ہے عوام 25 جولائی کو ووٹ کی امانت دینی قوتوں کے حق میں استعمال کر کے اپنے وطن ، ایمان ، حیا اور اپنی آخرت کی حفاظت کو یقینی بنائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں