43

نواز شریف کو اڈیالہ جیل سے اسپتال منتقل کرنے کے انتظامات مکمل

راولپنڈی(پاکستان اپ ڈیٹس ) سابق وزیراعظم نواز شریف کی اڈیالہ جیل میں طبیعت شدید خراب ہوگئی ہے اور ڈاکٹروں نے انہیں سی سی یو منتقل کرنے کی تجویز دے دی ہے۔سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کو جیل سے اسپتال منتقل کرنے کے لئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دیدی گئی ہے۔ انہیں انتہائی سخت سیکورٹی میں پمز منتقل کیا جائے گا۔ اس دوران ان کے معالج ڈاکٹر عدنان بھی ان کے ہمراہ رہیں گے۔سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کی آج صبح اڈیالہ جیل میں طبیعت بگڑ گئی تو پمز اسپتال کے ایچ او ڈی ڈاکٹر نعیم ملک نے انہیں سی سی یو منتقل کرنے کی تجویز دی۔ ڈاکٹروں کی جانب سے نوازشریف کا بلڈ ٹیسٹ کیا گیا تو ان کے خون میں کلاٹس کی نشاندہی ہوئی، جس کے باعث ان کے خون کی روانی متاثر ہوگئی اور دونوں بازوں میں شدید درد اٹھا جبکہ ای سی جی بھی غیرتسلی بخش آئی۔ڈاکٹر نعیم ملک نے میاں نواز شریف کو سی سی یو منتقل کرنے کی تجویز دی تو جیل حکام نے نگراں حکومت پنجاب سے رابطہ کیا جس نے نواز شریف کو اسپتال منتقل کرنے کی اجازت دے دی۔ اس حوالے سے اڈیالہ جیل کی سیکیورٹی مزید سخت کردی گئی اور جیل کے اردگرد پولیس کی اضافی نفری تعینات کردی گئی جب کہ میڈیا کو بھی جیل سے دوکلومیٹر دور روک دیا گیا۔نگراں وزیر داخلہ پنجاب شوکت جاوید نے کہا کہ نواز شریف کو اسپتال منتقل کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ تاہم سابق وزیراعظم کا طبی معائنہ کرنے والی میڈیکل ٹیم کا کہنا ہے کہ بار بار اصرار کے باوجود نوازشریف اسپتال منتقل ہونے سے انکار کررہے ہیں۔ادھر پمزاسپتال میں سیکیورٹی انتظامات مکمل کرلئے گئے ہیں، وی آئی پی وارڈ کے باہر پولیس کی بھاری نفری موجود ہے ۔ سادہ کپڑوں میں پولیس کے جوان پمز کے مختلف حصوں میں تعینات کردیئے گئے ہیں، غیر متعلقہ افراد کو وی آئی پی وارڈ کے باہر اور اردگرد سے ہٹایا دیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں