34

جماعت اسلامی ایوان کے اندر اور باہر کرپشن فری مہم جاری رکھے گی سینیٹر سراج الحق

ڈیرہ غازیخان (پاکستان اپ ڈیٹس )امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ لگتاہے کہ حکومت آئی ایم ایف کے پاس جانے کا ارادہ کر چکی ہے ۔ نئے نئے ٹیکسز اور روزمرہ ضرورت کی چیزوں کی قیمتوں میں اضافے سے آئی ایم ایف کے پاس جانے کی شرائط پوری کی جارہی ہیں ۔ موجودہ حکومت بھی سابقہ حکومتوں کے اقدامات پر چل اور ان کے فیصلوں کو ہی دوام بخش رہی ہے ۔ جماعت اسلامی ایوان کے اندر اور باہر کرپشن فری مہم جاری رکھے گی ۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے ڈیرہ غازیخان کے ارکان کے اجتماع سے خطاب اور بعدا زاں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ اجتماع ارکان سے صوبہ جنوبی پنجاب کے امیر شیخ عثمان فاروق ، ڈپٹی سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان اظہر اقبال حسن اور نائب امیر صوبہ چوہدری عزیر لطیف نے بھی خطاب کیا ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ ابھی تک حکومت عوام کو کوئی ریلیف نہیں دے سکی بلکہ الٹا حکومت نے بجلی ، گیس اور پٹرولیم مصنوعات ، سیمنٹ اور خشک دودھ کی قیمتوں میں اضافہ کر کے عام آدمی کی پریشانیوں کودو چند کردیاہے ۔ حکومت کی معاشی پالیسیاں بھی وہی ہیں جو سابقہ حکومتوں کی تھیں ۔انہوںنے کہاکہ اقتصادی صورتحال میں بہتری کا فی الحال کوئی امکان نظر نہیں آرہاکیونکہ پی ٹی آئی حکومت نے ا بھی کوئی ایسا انقلابی قدم نہیں اٹھایا جس سے زبوں حالی کی شکار معیشت کو کوئی سہارا ملتا ۔ حکومت نے معیشت کو سود سے پاک کرنے اور زکوة و عشر کا نظام رائج کرنے کا وعدہ کیا تھا مگر ابھی تک حکومت گومگو کی حالت میں ہے اور ایسا محسوس ہوتاہے کہ حکومتی مشیر اسے اس طرف قدم اٹھانے سے روک رہے ہیں ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ جماعت اسلامی نے جس کرپشن فری پاکستان تحریک کا آغاز کیا تھا ، وہ کامیابی سے جاری ہے اور آج قوم کا بچہ بچہ کرپشن کے خلاف بات کرتاہے ۔ جماعت اسلامی پاکستان کو کرپشن سے پاک کرنے کی مہم جاری رکھے گی اور ہم ایوانوں کے اندر اور باہر کرپشن کے خلاف آواز بلند کرتے رہیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ جب تک قومی دولت لوٹنے والوں اور اپنے اختیارات کا ناجائز فائدہ اٹھا کر دولت کے انبار لگانے والوں کا کڑا احتساب نہیں ہوتا ، عوام مطمئن نہیں ہوں گے ۔ انہوںنے کہاکہ اگر بیرونی بنکوں میں پڑا پاکستانی سرمایہ ملک میں آ جائے تو حکومت کو کسی کے آگے ہاتھ پھیلانے کی ضرورت نہیں پڑے گی اور حکومت عوام کو نہ صرف ریلیف دے سکے گی بلکہ ڈیموں کے لیے بھی مطلوبہ رقم مل جائے گی ۔ انہوں نے کہاکہ حکومت کو اپنے بیگانے کی تمیز کیے بغیر احتساب کے عمل کو آگے بڑھاناہوگا ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ جنوبی پنجاب محرومیوں کی تصویر بناہوا ہے ۔ ضمنی بجٹ میںبھی جنوبی پنجاب کی طرف کوئی خاص توجہ نہیں دی گئی ۔ باصلاحیت پڑھے لکھے نوجوان بے روزگار ہیں اور ہر جگہ غربت اور پسماندگی نے ڈیرے ڈال رکھے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ کسانوں اور چھوٹے زمینداروں کی محنت کا پھل وڈیرے اور جاگیر دار کھا رہے ہیں ۔ لاکھوں ایکڑ زمین حکومت کی عدم توجہ کی وجہ سے بے آباد پڑی ہے اور چھوٹے کسانوں نے اپنا خون پسینہ بہا کر جو زمین آباد کی ہے ، اس کے بھی انہیں مالکانہ حقوق نہیں دیے جارہے ۔ انہوں نے کہاکہ ہر حکومت نے جنوبی پنجاب کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک روا رکھا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں