48

حافظ محمد سعید کی اپیل پرمقبوضہ کشمیرپر بھارتی قبضہ کے71سال مکمل ہونے پر لاہور سمیت مختلف شہروں و علاقوں میں زبردست احتجاج

لاہور(پاکستان اپ ڈیٹس)امیر جماعة الدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید کی اپیل پرمقبوضہ کشمیرپر بھارتی قبضہ کے71سال مکمل ہونے پر لاہور سمیت مختلف شہروں و علاقوں میں زبردست احتجاج کیا گیا۔صوبائی دارالحکومت لاہور میں پریس کلب کے باہر ہونے والے احتجاجی مظاہرہ میں طلبائ، وکلائ، تاجروں، سول سوسائٹی اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ مظاہروں کے دوران مظلوم کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے انڈیا کیخلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔حافظ محمد سعید ،مولانا سمیع الحق،حافظ عبدالرحمان مکی،مولانا عبدالعزیز علوی، حافظ عبدالغفار روپڑی و دیگر نے مقبوضہ کشمیر پر بھارتی غاصبانہ قبضہ کے71سال مکمل ہونے پر کشمیری مسلمانوں کو بھارتی مظالم کے سامنے ڈٹ جانے پر خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ کشمیر یوں کی آزادی کی منزل دور نہیں۔نہتے کشمیری آٹھ لاکھ مسلح بھارتی فوجیوں کا مقابلہ کرتے ہوئے بھی پر عزم ہیں کہ وہ آزادی لے کر رہیں گے۔چھ لاکھ سے زائد شہادتوں کے باوجود انکے حوصلے بلند اور عزم جوان ہیں۔بھارتی فوج نہتے کشمیریوں کیخلاف پیلٹ گن جیسے ممنوعہ ہتھیار استعمال کرنے کے باوجود بھی ان کا جذبہ آزادی نہیں کچل سکی۔ پاکستانی قوم کشمیری مسلمانوں کی جرا ت و استقامت کو سلام پیش کرتی ہے۔پاکستان کا بچہ بچہ آزادی کشمیر کے لئے جانیں قربان کرنے کے لئے تیار ہے۔آزادی کشمیر کی تحریک در حقیقت تکمیل پاکستان کی تحریک ہے۔انسانی حقوق کے عالمی اداروںکی مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم پر خاموشی افسوسناک ہے۔صوبائی دارالحکومت لاہور میں ہونیوالے احتجاجی مظاہرہ میں شرکاءنے ہاتھوں میں کتبے ،بینرزاور پاکستانی پرچم اٹھا رکھے تھے جن پر مظلوم کشمیریوں کے حق میں اور بھارت سرکار اور فوج کیخلاف تحریریں درج تھیں۔مظاہرین کی طرف سے کشمیریوں سے رشتہ کیا لاالہ الااللہ‘ ڈاکٹرعبدالمنان وانی، معراج الدین بنگرو شہید سے رشتہ کیا‘لاالہ الااللہ، سید علی گیلانی، حافظ سعید قدم بڑھاو ہم تمہارے ساتھ ہیں اور کشمیر بنے گا پاکستان جیسے نعرے لگائے جاتے رہے۔ احتجاجی مظاہرہ سے جماعة الدعوة کے مرکزی رہنما مولانا امیر حمزہ،حافظ عبدالغفار روپڑی،ابوالہاشم ربانی،عقیل چوہدری ایڈوکیٹ،شیخ نعیم بادشاہ،مولانا رمضان منظور، فہیم الحسن تھانوی،راجہ عمران، چوہدری عنایت گجر،سرفراز خان،میاں محبو ب احمد،رانا محمد عاصم،،مولانا ادریس فاروقی،حافظ عثمان شفیق،حافظ مسعود الرحمان جانباز نے خطاب کیا۔مولانا امیر حمزہ نے اپنے خطاب میں کہا کہ برصغیرمیںامن کا راستہ کشمیر کی آزادی کی تحریک سے گزرتا ہے۔ہم کشمیریوں کے ساتھ زبانی یکجہتی نہیں کر رہے بلکہ عملی طور پر کشمیریوں کی تحریک میں شانہ بشانہ ہیں۔جماعة الدعوة آج ملک بھر میں کشمیریوں سے یکجہتی کےلئے احتجاج کر رہی ہے۔انہوںنے کہاکہ بھارتی فوج کشمیریوں پرہر آنے والے دن نئے طریقوں سے مظالم کرتی ہے۔کشمیر پر بھارت کا قبضہ ہے اور انسانی حقوق کی تنظیمیں ،ادارے سب خاموش ہیں۔حافظ عبدالغفار روپڑی،مولانا رمضان منظور، ابوالہاشم ربانی نے کہا کہ بھارت سن لے،پیلٹ گن کے استعمال کے بعد نفسیاتی حملوں سے کشمیریوں کو زیر نہیں کیا جا سکتا۔اس طرح امن نہیں آئے گا۔کشمیر کی تحریک کو دہشت گردی کہنے والے کشمیری و پاکستانی قوم سے مخلص نہیں ہیں۔ کشمیری شہداءکی قربانیاں تحریک آزادی کے ماتھے کا جھومر ہیں۔ کشمیریوں کے خون سے بے وفائی کے سبب موجودہ حکومت مشکلات سے دوچار ہے۔ شیخ نعیم بادشاہ،فہیم الحسن تھانوی،عقیل چوہدری ایڈوکیٹ،راجہ عمران،چوہدری عنایت گجر،سرفراز خان،میاں محبو ب احمد،رانا محمد عاصم،،مولانا ادریس فاروقی،ھافظ عثمان شفیق اورحافظ مسعود الرحمان جانباز نے کہاکہ ہم آج کشمیریوں کو پیغام د ے رہے ہیں کہ پاکستانی قوم ان کے ساتھ ہے۔کشمیری سیاہ پرچم لہرا کر دنیا کو پیغام دے رہے ہیں کہ کشمیر بھارت کا اٹوٹ انگ نہیں بلکہ پاکستان کی شہ رگ ہے۔دریں اثناءامیر جماعة الدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے مرکز القادسیہ چوبر جی میں مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کشمیری پاکستان کی سا لمیت کی جنگ لڑ رہے ہیں‘ انہیں کسی صورت غاصب بھارت کے ظلم و ستم کے حوالے نہیں کیا جا سکتا۔ پاکستانی قوم تحریک آزادی میں کشمیریوں کے ساتھ قدم سے قدم اور کندھے سے کندھا ملا کر کھڑی ہے۔ مظلوم کشمیریوں کوحق خودارادیت ملنے تک جنوبی ایشیا میں کسی صورت امن قائم نہیں ہو سکتا۔انہوںنے کہاکہ ہم کشمیریوں کو پیغام دینا چاہتے ہیں کہ پاکستانی قوم انکی جدوجہد کو بھلانے والی نہیں ہے۔کشمیریوں کی ہر ممکن مددوحمایت کا سلسلہ جاری رکھا جائے گا۔ کشمیر ایک وادی کا نہیں بلکہ کرہ ارض پر سب سے بڑی جیل کا نام ہے جس میں لاکھوں لوگ قید ہیں اور بھارتی ظلم و بربریت کا شکار ہیں۔دفاع پاکستان کونسل کے چیئرمین مولانا سمیع الحق،حافظ عبدالرحمان مکی اورمولانا عبدالعزیز علوی نے کہا ہے کہ پاکستان کے استحکام اور بقاءکے لیے کشمیرکو بھارت کے غاصبانہ قبضہ سے چھڑانابہت ضروری ہے۔ کشمیر کے بغیر پاکستان نامکمل ہے پاکستانی قوم شہدائے کشمیر کی قربانیاں رائیگاں نہیں جانے دے گی،بھارت ظلم و جبر کی بنیاد پر کشمیرپر اپنا قبضہ برقرار نہیں رکھ سکتا۔اس نے ہر حربہ آزما کر دیکھ لیا ہے لیکن اس کے باوجود کشمیریوں کے عزم میں کمی نہیں آ سکی۔ کشمیریوں کی تکلیف کا درد پاکستانی اپنے سینوں میں محسوس کرتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں