32

احتجاج کرنے والے ریاست سے نہ ٹکرائیں، وزیراعظم عمران خان

اسلام آباد(پاکستان اپ ڈیٹس)وزیراعظؓم عمران خان نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے ایک فیصلے کو بنیاد بنا کر پاکستان میں انارکی پھیلانے کی کوشش کرنے والے ریاست سے نہ ٹکرائیں اور اپنے خلاف ایکشن پر مجبور نہ کریں۔وزیرِاعظم عمران خان کا اپنے اہم خطاب میں کہنا تھا کہ میں آج اپنی قوم کے سامنے صرف اس لیے آیا ہوں کہ سپریم کورٹ کے ایک فیصلے پر ایک چھوٹے سے طبقے نے جو زبان استعمال کی وہ ناقابل برداشت ہے، یہ اسلام کی خدمت نہیں بلکہ ملک دشمنی کر رہے ہیں، اگر یہ عناصر اپنے احتجاج سے باز نہ آئے تو ریاست اپنی رٹ قائم کرے گی۔وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان مدینہ کی ریاست کے بعد واحد ملک ہے جو اسلام کے نام پر بنا، پاکستان میں کوئی قانون قران و سنت کیخلاف نہیں بن سکتا، پاکستان کو اسلامی فلاحی ریاست بنا رہیں گے، پاکستانی ریاست مدینہ کے اصولوں کو اپنا کر ایک عظیم ملک بنے گا۔عمران خان کا کہنا تھا کہ اس شخص کا ایمان اس وقت تک مکمل نہیں ہو سکتا جب تک وہ اپنے نبی حضرت محمد ﷺ سے عشق نہیں کرتا، نبی کریم ﷺ کی شان میں گستاخی کسی صورت قبول نہیں کرینگے۔ان کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ججز کو قتل کرنے کے فتوے دینے والے اور افواج پاکستان کے جرنلز کیخلاف نازیبا استعمال کرنے والے اسلام کی خدمت نہیں کر رہے، سڑٰکیں بند ہونے سے عام پاکستانی سمیت ملکی معیشت کا نقصان ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میری پاکستانیوں سے درخواست ہے کہ وہ ایسے عناصر کے فریب میں نہ آئیں جو اسلام کا نام لے کر صرف اپنا ووٹ بینک بڑھا رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں