113

پاکستان کی طرف سے تربیتی مشن پر سعودی عرب فوج بھجوانے کا فیصلہ لائق تحسین ہے:پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی

لاہور(پاکستان اپ ڈیٹس )جماعةالدعوة سیاسی امور کے سربراہ پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی نے کہا ہے کہ پاکستان کی طرف سے تربیتی مشن پر سعودی عرب فوج بھجوانے کا فیصلہ لائق تحسین ہے۔بعض سیاستدان منظم منصوبہ بندی کے تحت اس معاملہ کو متنازعہ بنانے کی کوششیں کر رہے ہیں۔ سرزمین حرمین شریفین کا دفاع پوری مسلم امہ پر فرض ہے۔ پاکستانی قوم حرمین کے تحفظ کیلئے ہر قسم کی قربانی پیش کرنے کیلئے تیار ہے۔ دشمنان اسلام مسلمانوں کے دینی مرکز سعودی عرب کو نقصانات سے دوچار کرنا چاہتے ہیں۔ مسلم ممالک متحد ہو کر صلیبیوں ویہودیوں کی سازشیں ناکام بنانے کیلئے بھرپور کردار ادا کریں۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ حوثی باغیوں کی طرف سے یمن کی سرزمین استعمال کرتے ہوئے آئے دن سعودی عرب کے مختلف شہروں پر میزائل حملوں کی کوششیں کی جارہی ہیں حتیٰ کہ بیت اللہ شریف کو بھی نشانہ بنانے کی ناپاک کوششیں کی جاچکی ہیں۔ حوثی باغی اعلانیہ طور پر مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ پر حملوں کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔ ان حالات میں پاکستان کی طرف سے سعودی فورسز کی تربیت کیلئے اپنے فوجی بھجوانے کا اعلان پوری پاکستانی قوم کے جذبوں کا ترجمان ہے۔ عبدالرحمن مکی نے کہاکہ سعودی عرب اور پاکستان یک جان دو قالب ہیں۔ برادر اسلامی ملک نے مشکل وقت میں کبھی پاکستان کوتنہا نہیں چھوڑا اور ہر موقع پر پاکستان کا ساتھ دینے کا حق ادا کیا ہے۔ آج اگر سعودی عرب مشکل صورتحال سے دوچار ہے تو پاکستان کو بھی اپنے محسن ملک کی بھرپور مدد کرنی چاہیے اور سرزمین حرمین شریفین کے دفاع کا فریضہ ادا کرنے سے کسی طور غافل نہیں رہنا چاہیے۔ انہوںنے کہاکہ حرمین شریفین کا تحفظ سیاسی یا علاقائی نہیں بلکہ ہر مسلمان کے عقیدے و ایمان کا مسئلہ ہے۔ بیرونی قوتیں سرزمین حرمین شریفین کیخلاف خطرات کھڑے کر رہی ہیں۔ حوثی باغیوں کے سعودی عرب پر میزائل حملے پوری مسلم امہ پر حملہ کے مترادف ہیں۔حرمین کے تحفظ کیلئے مسلمانوں کو مضبوط قوت بن کر کردار ادا کرنا ہو گا۔ انہوں نے کہاکہ بیرونی قوتیں جس طرح سعودی عرب کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کی خوفناک سازشیں کررہی ہیں اس کیلئے پوری مسلم امہ کو متحد و بیدارکرنے اور دشمنان اسلام کی ان سازشوں کیخلاف زبردست آواز بلند کرنے کی ضرورت ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں