129

کشمیر کے حوالہ سے وزیر اعظم کا اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے بات کر لینا کافی نہیں: سیف اللہ خالد

لاہور(پاکستان اپ ڈیٹس )ملی مسلم لیگ کے صدر سیف اللہ خالد نے کہا ہے کہ کشمیر کے حوالہ سے وزیر اعظم کا اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے بات کر لینا کافی نہیں،حکومت بھارتی ریاستی دہشت گردی کو بے نقاب کرنے کے لئے او آئی سی کا اجلاس بلانے میں کردار ادا کرے۔خارجہ ڈیسک کو کشمیر کے حوالہ سے متحرک کیا جائے۔بین الاقوامی ضمیر کو جھنجھوڑنے کے لئے میڈیا بھی کشمیریوں کی تحریک آزادی کو اجاگر کرے۔ان خیالات کا اظہار انہو ں نے سمن آباد میں جمعہ کے اجتماع سے خطا ب اور بعد ازاں مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔سیف اللہ خالد نے کہا کہ بھارت کشمیر میں ریاستی دہشت گردی کر رہا ہے۔کشمیریوں کے جذبات کو بزور بندوق دبانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔شہادتوں کے باوجود کشمیری قوم دوقومی نظریہ کی بنیاد پر کھڑی ہے۔انہوں نے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ آج بہت شاندار رنگ اختیار کر چکا ہے۔ آج تحریک جس مقام پر پہنچی ہے پہلے کبھی نہیں تھی۔حریت رہنماﺅں کو گرفتار و نظربند کر دیا جاتا ہے۔دختران ملت کی چیئرپرسن سیدہ آسیہ اندرابی دہلی کی جیل میں قید ہیں۔گرفتاریوں و نظربندیوں اور شہادتوں کے باوجود کشمیریوں کے جذبات میں کوئی کمی نہیں آئی۔پاکستان میں بھی ضرورت اس امر ہے کہ کشمیریوں کی تحریک کا بھر پور ساتھ دیا جائے تا کہ ان کے حوصلے بلند ہوں۔سیاسی جماعتیں اپنے منشور میں کشمیر کو شامل کریں اور کشمیریوں کے لئے آواز اٹھائیں۔پوری پاکستانی قوم کو کشمیر کے حوالہ سے متحرک و بیدار ہونا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ آج ہر شخص کشمیریوں پر ہونیوالے تشدد کومیڈیا و سوشل میڈیا پر اجاگر کرے تو بین الاقوامی ضمیر کو جھنجھوڑ ا جا سکتا ہے۔اگر آج اس طرف توجہ نہ دی گئی تو تاریخ ہمیں معاف نہیں کرے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں