145

ملی مسلم لیگ رجسٹریشن کیس کی سماعت،جسٹس عامر فاروق نے الیکشن کمیشن کے لیگل ایڈاوئزر کو مہلت دیتے ہوئے سماعت 20 فروری تک ملتوی کردی

اسلام آباد( پاکستان اپ ڈیٹس )ملی مسلم لیگ رجسٹریشن کیس کی سماعت اسلام آباد ہائی کورٹ میں جسٹس عامر فاروق کی عدالت میں ہوئی،الیکشن کمیشن کے لیگل ایڈوائزر نے تیاری کیلئے مزید وقت مانگتے ہوئے کہا کہ میری تعیناتی نئی ہے،تیاری نہیں لہذا کچھ وقت دیا جایا جائے،جسٹس عامر فاروق نے الیکشن کمیشن کے لیگل ایڈاوئزر کو مہلت دیتے ہوئے سماعت 20 فروری تک ملتوی کردی ،بُدھ کو سماعت کے موقع پر وفاقی حکومت کی طرف سے ڈپٹی اٹارنی جنرل راجہ خالد جبکہ الیکشن کمیشن کی جانب سے لیگل ایڈوائزر ثناءاللہ زاہد پیش ہوئے،ملی مسلم لیگ کی جانب سے راجہ رضوان عباسی ایڈووکیٹ نے کیس کی تفصیلات سے معزز عدالت کو آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ ملی مسلم لیگ نے اگست 2017 میں بطور سیاسی جماعت رجسٹریشن کیلئے الیکشن کمیشن آف پاکستان میں درخواست دائر کی جس کو الیکشن کمیشن آف پاکستان نے وزارت داخلہ کی طرف سے جاری کردہ خط کی بنیاد پر مسترد کر دیا تھا۔ ملی مسلم لیگ نے الیکشن کمیشن آف پاکستان کے اس فیصلے کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کیا اور معزز عدالت نے الیکشن کمیشن کا فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے یہ حکم جاری کیا کہ ملی مسلم لیگ کی بطور سیاسی جماعت رجسٹریشن کی درخواست کو دوبارہ زیر غور لایا جائے، الیکشن کمیشن آف پاکستان نے دوبارہ وزارت داخلہ کے اسی خط کی بنیاد پر ملی مسلم لیگ کی درخواست کو مسترد کیا ، الیکشن کمیشن کے لیگل ایڈوائزر ثناءاللہ زاہد نے عدالت سے مزید مہلت مانگتے ہوئے کہاکہ میری تعیناتی نئی ہوئی ہے اور میری تیاری بھی نہیں ہے، لہٰذا کچھ وقت دیا جائے، جسٹس عامر فاروق نے سماعت 20 فروری تک ملتوی کردی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں