104

حکومتی عہدیداران و پالیسی ساز ادارے قرآن مجید کی روشنی میں پالیسیاں ترتیب دیں:پروفیسر حافظ عبدا لرحمن مکی

اسلام آباد(پاکستان اپ ڈیٹس )سرپرست اعلی ملی مسلم لیگ پروفیسر حافظ عبدا لرحمن مکی نے کہا ہے کہ مذہبی رواداری کے نام پر اسلام کی تعلیمات کو مسخ کیا جارہا ہے۔ حکومتی عہدیداران و پالیسی ساز ادارے قرآن مجید کی روشنی میں پالیسیاں ترتیب دیں۔ موجودہ نظام تعلیم کو اسلام کے مطابق ڈھالنا وقت کی اہم ضرورت ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامع مسجد قبا آئی ایٹ مرکز میں جمعہ کے اجتماع سے خطاب اور بعد ازاں مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر جڑواں شہروں سے سینکڑوں مرد و خواتین سمیت تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے احباب کی کثیر تعداد موجود تھی۔ حافظ عبدا لرحمن مکی نے کہا کہ اسلام مکمل ضابطہ حیات ہونے کی حیثیت سے آج کے دور میں بھی مکمل راہنمائی فرماتا ہے۔ قرآن کی تعلیمات کو سمجھنے کے لیے ضروری ہے کہ ہر مسلمان قرآن مجید کا مطالعہ کرے اور اس کو سمجھے۔ مساجد کے منبر انبیا کی وراثت ہیں ۔ ان سے حق بات کا بیاں ہونا از حد ضروری ہے۔ علماءکی ذمہ داری ہے کہ وہ امت مسلمہ کو درست راہنمائی فراہم کریں اور دور جدید کے تقاضوں کو سامنے رکھتے ہوئے اسلامی تعلیمات سے روشناس کروائیں۔انہوں نے مزید کہا کہ مسلمان ممالک میں اتحاد ناگزیر ہے۔ امت مسلمہ کی نشاط ثانیہ کے لیے اس کے سوا کوئی چارہ کار نہیں ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں