74

صحافیوں کے معاشی قتل کے خلاف احتجاجی کیمپ کا چوتھا روز

لاہور(پاکستان اپ ڈیٹس )جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے زیراہتمام صحافتی اداروں کی بندش،چھانٹیوں،برطرفیوں اور تنخواہوں میں کٹوتیوں کے خلاف لاہور پریس کلب کے سامنے احتجاجی کیمپ چوتھے روز بھی جاری رہا۔احتجاجی کیمپ میں صحافیوںکی نمائندہ تنظیموں کے رہنماﺅںسمیت صحافیوں کی کثیرتعدادنے شرکت کی۔اس موقع پر پریس کلب کے سینئر نائب صدر ذوالفقار علی مہتو، سیکرٹری زاہد عابد، سینئر صحافی زاہد شفیق طیب، نفیس بزمی، شکیل سعید، سہیل شفیق بٹ، امجد محمود اور دیگر رہنماﺅں نے خطاب کیا ۔ احتجاجی کیمپ کے چوتھے روز صحافیوں سے اظہار یکجہتی کیلئے پرنٹنگ پریس سی بی اے یونین ، مسلم لیگ ق اور کے رہنماﺅں نے بھی شرکت کی۔ احتجاجی کیمپ میں مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا حتجاج کسی ایک ادارے یا کسی ایک میڈیا مالک کے خلاف نہیں ہے بلکہ ان حالات کے خلاف ہے جس کے تحت ادارے بند ہو رہے ہیں، جبری برطرفیاں ہو رہی ہیںاور تنخواہوں میں کٹوتیاں کی جا رہی ہیں، صحافیوں کے مسائل کے حل کیلئے حکومت کو بھی اپنا کردار ادا کرنا ہوگا، میڈیا مالکان کے ساتھ حکوت معاملات طے کرے اور ورکرز کی بحالی کو یقینی بنائے، مقررین نے مزید کہا کہ میڈیا مالکان اور حکومت کان کھول کر سن لیں کارکنوںکی بحالی ، تنخواہوںمیں کٹوتیوں کی واپسی اوربندکئے گئے اداروں کودوبارہ فعال کرنے تک ہماری تحریک جاری رہے گی ، مقررین نے میڈیا ورکرز کی بحالی کی تحریک کو تیز کرنے کی ضرورت پر زور دیا ، انہوں نے مزید کہا کہ اے پی این ایس کی جانب سے اخبارات کی قیمتوں کا تعین کرنے کے طریقہ کار کا مسابقتی کمیشن کو جائزہ لینا چاہئے ۔جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے زیراہتمام 12فروری بروزمنگل سہ پہر3.00بجے دوبارہ پریس کلب کے سامنے احتجاجی کیمپ لگایاجائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں