239

ہارس ٹریڈنگ جمہوریت کی توہین ہے، سینیٹ انتخابات متناسب نمائندگی کی بنیاد پر کروائے جائیں، پیر اعجاز ہاشمی

لاہور (پاکستان اپ ڈیٹس ) جمعیت علما پاکستان کے مرکزی صدر پیر اعجاز احمد ہاشمی نے کہا ہے کہ سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ جمہوریت اور ایوان بالا کی توہین کا باعث بنی ہے۔کروڑوں کی رشوت لے کر ووٹ بیچنے والے اور خریدنے والے سیاسی نظام کے لئے باعث شرم ہیں۔ایسے لوگ 6۔ سال تک خیانت کی بنیاد پر قانون سازی کا حق رکھ کر قوم کی کیا خدمت کریں گے۔مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سیاسی جماعتوں نے کارکنوں کی بجائے سرمایہ داروں کو پارٹی ٹکٹ دے کرثابت کردیا کہ عام آدمی کا سیاست میںکوئی کردار نہیں۔وہ صرف نعرے لگانے اور ووٹ دینے کے لئے ہیں۔ سیاسی جماعتوں کا یہ رویہ کارکنوں کی توہین کے مترادف ہے۔پھر انہیں لوگوں نے کروڑوں کی بولیاں لگائیں اور ووٹ خریدے۔ ووٹ کا تقدس بحال کرنے اورضمیر کی خریدوفروخت روکنے میں ناکامی کا الیکشن کمشن کو نوٹس لینا چاہیے تھا۔مگر یہ ادارہ اپنی موجودگی کا احساس بھی نہیں دلا سکا۔ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ سینیٹ انتخابات متناسب نمائندگی کی بنیاد پر کروانے کے لئے قانون سازی کی جائے۔تاکہ عوامی نمائندگی کا صحیح حق اداہو اور ہر سیاسی جماعت کوعددی اعتبار سے پارلیمنٹ کے ایوان بالا میں اس کا حق ملے۔پیر اعجاز ہاشمی نے افسوس کا اظہار کیا کہ پارٹی ٹکٹ ایسے لوگوں کو دیے گئے جنہوںنے اپنی جماعت کے قائدین کے اے ٹی ایم اور میزبان کے طور پر بہترین خدمات سرانجام دی تھیں۔انہوں نے کہا کہ یہ مکافات عمل ہے کہ کراچی کے عوام پر 1986ءسے مسلط ایم کیوایم اپنے انجام کو پہنچ رہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں