254

لاہور ہائی کورٹ نے اقوام متحدہ کی قرارداد ،نئے صدارتی آرڈیننس کیخلاف دائر رٹ پٹیشن کی سماعت ،وفاقی اور صوبائی حکومت کو نوٹس جاری

لاہور(پاکستان اپ ڈیٹس )لاہور ہائی کورٹ نے اقوام متحدہ کی قرارداد سے متعلق جاری کردہ نئے صدارتی آرڈیننس کیخلاف دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کے دوران وفاقی اور صوبائی حکومت کو نوٹس جاری کئے ہیں اور 29مارچ تک تحریری جواب طلب کیا ہے۔ امیر جماعةالدعوة حافظ محمد سعید کی طرف سے دائر کردہ پٹیشن کی سماعت مسٹس جسٹس امین الدین خاں نے کی۔حافظ محمد سعید کے وکیل اے کے ڈوگر ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ پاکستان ایک آزاد اور خودمختارریاست ہے جو اپنا قانون خود بناتی ہے۔حکومت کی طرف سے نیا آرڈیننس جاری کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ اقوام متحدہ اگر کسی تنظیم یا شخصیت پر پابندی لگاتی ہے تو وہ پاکستان میں بھی کالعدم ہو گی۔ یہ پاکستان کی آزادی و خودمختاری کے خلاف ہے۔ انہوںنے کہاکہ اقوام متحدہ نے کشمیر پر کئی قراردادیں پاس کی ہیں ان پر انڈیا نے آج تک کوئی عمل نہیں کیا۔ ہم اپنے قانون پر عمل درآمد کے پابند ہیں۔ کسی جماعت کو بھارتی و امریکی دباﺅ پر رفاہی و فلاحی سرگرمیوں سے روکنا غیر آئینی اقدام ہے۔صدارتی آرڈیننس کے خلاف دائر درخواست کی آئندہ سماعت 29مارچ کو ہو گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں